جرمنی نے فٹ بال ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا

جرمنی کی قومی فٹ بال ٹیم نے عالمی ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائنگ مقابلوں کے سلسلے میں شمالی آئرلینڈ کو ہرا کر سن دو ہزار اٹھارہ کے ورلڈ کپ مقابلوں کے لیے اپنی جگہ پکی بنا لی ہے۔

جرمن قومی فٹ بال کی ٹیم نے جمعرات کی شب بیلفاسٹ میں کھیلے گئے ایک میچ میں شمالی آئرلینڈ کو ایک کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے دی۔ اس ورلڈ کپ کوالیفائنگ میچ میں سباستیان روڈی، ساندرو واگنر اور جوشوا کیمش نے جرمنی کے لیے گول اسکور کیے۔ روڈی اور واگنر نے پہلے ہاف میں گول کیے اور جرمنی کو ابتدائی برتری دلوائی جبکہ کیمش نے دوسرے ہاف میں گول کر کے اس برتری کو مزید مستحکم بنا دیا۔

کنفیڈریشن کپ میں جیت، جرمن فٹ بال کا ’مستقبل تابناک‘

فٹبال رینکنگ: جرمنی پھر پہلے نمبر پر

روس اور قطر میزبان، کئی ممالک پریشان

یوں ان ورلڈکپ کوالیفائنگ مقابلوں میں جرمنی ناقابل شکست ہی رہا۔ جرمنی نے اس راؤنڈ میں مجموعی طور پر گیارہ میچ کھیلے اور سبھی میں وہ فتح یاب رہا۔ ستائیس سالہ روڈی نے میچ کے بعد صحافیوں سے گفتگو میں کہا، ’’اب ہم روس جا رہے ہیں۔ ہم کامیابی کے ساتھ اپنے ٹائٹل کا دفاع کرنا چاہتے ہیں۔‘‘ جرمن کھلاڑی روڈی بائیس بین الاقوامی میچوں میں اپنے ملک کی نمائندگی کر چکے ہیں لیکن ابھی تک وہ گول نہیں کر سکے تھے۔

اس کامیابی کے بعد جرمن فٹ بال ٹیم کے کوچ یوآخم لوو نے کہا کہ وہ بہت خوش ہیں۔ انہوں نے کہا، ’’ہمیں علم تھا کہ شمالی آئرلینڈ کی ٹیم انتہائی دفاعی انداز میں کھیلے گی اور اس پر اس ٹیم کو ملکہ بھی حاصل ہے۔ تاہم ہم نے اچھا کھیل پیش کیا اور آئرش کھلاڑیوں کو انتہائی کم چانسز دیے۔‘‘

گروپ سی کے اس میچ کے دوسرے منٹ میں ہی روڈی نے گول کر دیا، جس کے بعد اکیسویں منٹ میں واگنر کے دوسرے گول نے اٹھارہ ہزار کے تماش بینوں کو خاموش کرا دیا۔ دوسرے ہاف میں 86 منٹ میں کیمش نے جب گول کیا تو جرمنی کو تین صفر کی برتری حاصل ہو گئی۔ تاہم کھیل کے اختتامی لمحات میں آئرش کھلاڑی ماگینس نے ایک گول کر دیا۔

اس ناکامی کے باوجود شمالی آئرلینڈ کی ٹیم ’پلے اوف‘ میچوں میں کامیابی حاصل کرتے ہوئے روس میں ہونے والے آئندہ ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کر سکتی ہے۔ دوسری طرف انگلش فٹ بال ٹیم نے بھی جمعرات کے دن سلووینیہ کو ایک میچ میں ایک صفر سے مات دے کر آئندہ عالمی فٹ کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا ہے۔ آئندہ ورلڈ کپ چودہ جون تا پندرہ جولائی روس میں منعقد کیا جا رہا ہے۔

روبرٹو فرمینو

ناقابل یقین حد تک زیادہ رقم یعنی 41 ملین یورو کے عوض 23 سالہ برازیلی کھلاڑی ہوفن ہائیم کی ٹیم کو چھوڑ کر پریمیئر لیگ میں لیورپول کی ٹیم کے لیے کھیلیں گے۔ پاکستانی روپوں میں یہ رقم چار ارب، 71 کروڑ اور 50 لاکھ کے قریب بنتی ہے۔ اگر رپورٹ کی گئی رقم درست ہوئی تو فرمینو مہنگے ترین کھلاڑی بن جائیں گے۔

خاوی مارٹینیز

اب تک سب سے زیادہ رقم کے عوض ایک کلب چھوڑ کر دوسرے میں جانے کا اعزاز بائرن میونخ کے ہسپانوی کھلاڑی خاوی مارٹینیز کے پاس تھا۔ 2012ء میں بائرن میونخ کی ٹیم نے 40 ملین یورو کے عوض اتھلیکٹک بِلباؤ کلب میں کھیلنے والے مارٹینیز کی خدمات حاصل کی تھیں۔ فرمینو کی لیورپول میں جانے کے لیے معاوضے کی رقم کے بعد مارٹینیز دوسرے مہنگے ترین کھلاڑی بن گئے ہیں۔

ماریو گوٹزے

2013ء میں بائرن میونخ نے 37 ملین یورو کے عوض بوروسیا ڈورٹمنڈ میں کھیلنے والے معروف کھلاڑی ماریو گوٹزے کی خدمات حاصل کیں۔

ایڈِن جیکو

قریب اتنی ہی رقم مانچسٹر سِٹی نے 2010-11 میں وولفس بُرگ کی ٹیم میں کھیلنے والے کھلاڑی بوسنیا کے کھلاڑی ایڈن جیکو کے لیے ادا کی۔ اس اسٹرائیکر کھلاڑی نے دونوں ٹیموں کے ساتھ باری باری مقامی لیگ میں فتح حاصل کی۔ انہوں نے بوسنیا کی قومی ٹیم کے لیے کھیلتے ہوئے پہلی بار اس کے ورلڈ کپ ٹورنامنٹ میں پہنچنے میں بھی مدد دی۔

اندری شُرلے

جرمن کلب وولفس بُرگ نے 2015ء کے آغاز میں چیلسی کلب سے اندری شُرلے کی خدمات 32 ملین یوروز میں حاصل کیں۔ تاہم وہ ابھی تک اتنے زیادہ معاوضے کا حق ادا نہیں کر پائے۔

مانوئل نوئر

صرف گول اسکور کرنے والے کھلاڑی ہی زیادہ معاوضہ حاصل کرنے والوں میں شامل نہیں ہیں بلکہ 2011ء میں جرمن کلب شالکے کے گول کیپر مانوئل نوئر کی خدمات بائرن میونخ نے 30 ملین یوروز میں حاصل کیں۔ اور یہ بات عیاں ہے کہ نوئر نے اپنے کھیل کی بدولت بائرن میونخ کو فتوحات سے ہمکنار کیا ہے۔

ٹونی کروس

ٹونی کروس برازیل میں کھیلے جانے والے فٹبال ورلڈ کپ میں جرمن ٹیم کے ایک اہم مرکزی کھلاڑی رہے۔ وہ 2014ء میں ہی بائرن میونخ سے 30 ملین یورو کے عوض ریال میڈرڈ میں شامل ہوئے تھے۔ تاہم ریال میڈرڈ کے لیے جو کرسٹیانو رونالڈو جیسے کھلاڑیوں کے لیے 90 ملین یورو تک خرچ کر چکی ہے، یہ رقم اتنی زیادہ نہیں لگتی۔

ماریو گومیز

اس بات کو کچھ سال بیت چکے ہیں مگر ماریو گومیز کی 30 ملین یورو کے عوض اشٹٹ گارٹ سے بائرن میونخ منتقلی اس وقت ایک بڑی خبر تھی۔ بنڈس لیگا میں یہ اب بھی ٹاپ ٹین ٹرانسفرز میں شمار ہوتا ہے۔ جرمن کھلاڑی ماریو گومیز اب اطالوی کلب فیورنٹینا کے لیے کھیلتے ہیں۔

موضوعات